گزارش

Published in: Revolution Flame


Image

سنو

یہ جو راستے ہیں راستوں کی تلاش میںٖ،
انہیں فرار دو
یہ جو خود سری کا شوق ہے ہواؤں کو،
انہیں قرار دو
یہ جو برف سی جمی ہوئی ہے رگٍ جان پر،
اٍسے چراغ اپنا اْدھار دو
یہ جو ہجوم ہے خودغرضی کے سایوں کا،
اْسے مار دو
یہ جو خوابوں کا چمن ہے تیری آنکھ میں،
کسی روز اٍسے بہار دو
یہ جو وخشت کا لبادہ ہے تیرے شہر پر،
اٍک دن اٍسے اْتار دو

ہمیں پیا ر دو
ہمیں پیا ر دو


ذنیرہ افضال

Advertisements

6 thoughts on “گزارش

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s